اصلی غوث الاعظم کون؟ عبدالقادر جیلانی کی تعلیمات کا قران و حدیث کی روشنی میں ایک جائزہ

السلام علیکم قارئین

ہماری دین اسلام کی طرف اس نئی اپروچ کی روشنی میں ہم اس مضمون کو بلاگ سے ہٹا رہے ہے۔ ہمارے وہ قارئین جنہوں نے اس مضمون کو پڑھا ان سے التماس ہے کہ ہم اب بھی اس مضمون میں اٹھائے گئے غلط عقائد و رسومات سے بالکل اسی طرح اختلاف رکھتے ہیں جسطرح پہلے رکھتے تھے لیکن ہم ان عقائد و رسومات یا انہیں ایجاد کرنے والے لوگوں کی طرف اپنی پرانے طرز عمل سے متفق نہیں ہیں۔ ہماری رائے میں ان مسائل کو ایک مختلف انداز میں اپروچ کرنے سے زیادہ بہتر نتائج برآمد ہو سکتے ہیں۔

البتہ اس مضمون کے جواب میں اٹھائے جانے والے قارئین کے سوالات اور اعتراضات کو بلاگ پر برقرار رکھا جا رہا ہے۔ 

جزاک اللہ۔ 

12 Comments

Filed under Belief (Aqeeda)

12 responses to “اصلی غوث الاعظم کون؟ عبدالقادر جیلانی کی تعلیمات کا قران و حدیث کی روشنی میں ایک جائزہ

  1. many new points MashaAllah another great article on a extremely important issue jazak Allah khair wa ahsanul jaza

  2. MRs TAHIR

    JAZAK ALLAH

    AAJ IN SAB BATOUN KO SAMAJHNA BOHAT ZAROORI HAY K JINHAIN LOUG WALI ULLAH QARAR DAITY HAIN UN KI TALEEMAT KAISI HAIN, KIA YEH ALLAH K NAIK BANDOUN MAY SHAMIL KARNY K LAIQ HAIN YA NAHI?

    JIN KAMOU KA HUKUM ALLAH RABULIZZAT NAY DIYA HAY, AUR JO HADEES HAMY BATATI HAY WOH TOU BAS YAHI HAY K MABOODAN E BATIL KA INKAAR KIA JAYE.

    AUR ALLAH KO HI APNA MUSHKIL KUSHA, GOUSUL AZAM, GAREEB NAWAZ, JHOLIYAAN BHARNY WALA SAMJHA JAYE

    ALLAH SAB KO DEEN E ISLAM SAMJHNY KI TOUFEQ DAY AMEEN

  3. Asslamo alikum jaza ka Allah brother ghunia tu talbeen main peeri mureedi ka bab main bee boht kush hai. asl main too ya sofia ki kitabain kahain say bee sahi nahi. in hoon nay quran hadees koo use kia kofer shirk phelnay kay lai

  4. brothers you can also contact to this knowledgeable blog from the cool links of the website itskyway.com

  5. brother ap apny blog per web address correct ker dain http://www.itskyway.com aour please mujay apna phone number bee e mail ker dain

  6. Qadiri Sher

    اوہ وہابی حرامزادو تمہاری خباثت اور کمینگی کا اس سے بڑا ثبوت ارو کیا ہو سکتا ہے کہ خود حضور پر نور شافع یوم النشور صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے تمہیں شیطان کا سینگ فرمایا ہے، سعودیہ کی حرام کی دولت پر جس تمہارے مذہب کی عمارت بنی ہوئی ہے انشاء اللہ جلد ہی یہ زمین بوس ہو جائے گی۔ تم پوری امت کو سوائے خود کے مشرک اور بدعتی کہتے ہو مگر تمہیں آل سعود کی عیاشیاں شراب نوشیاں زنا کاریاں اور سب سے بڑھ کر یہود و نصاری کی کاسہ لیسیاں نظر نہیں آتیں۔ آخر کیوں؟ تم کس کے ایجنٹ ہو؟ کیا تمہیں نظر نہیں آتا کہ اس خبیث وہابی حکومت نے محض اپنا شخصی اقتدار بچانے کے لئے امریکہ اور اسرائیل کے ساتھ ساز باز کر کے پوری امت مسلمہ کا کتنا خون بہایا ہے؟٫؟ وہاں تمیاری زبان گنگ کیوں ہو جاتی ہے۔ اس لئے کہ تم خود مسلمان نہیں ہو اسی لئے خون مسلم کے ناحق بہنے کے جشن میں طاغوتی طاقتوں کے ساتھ شامل ہو۔ آج جس ہستی یعنی سیدنا غوث الاعظم الشیخ السید عبدالقادر جیلانی رضی اللہ تعلی عنہ کی ذات بابرکات پر تم نے زبان درازی کی ہے کیا تمہیں معلوم نہیں کہ مسجد اقصی کو عیسائیوں کے قبضے سے آزاد کروانے والا عظیم مجاہد سلطان صلاح الدین ایوبی انہی غوث الاعظم کا مرید اور خادم تھا ہاں مگر تمہیں یہ کیسے اچھا لگے کیونکہ تم تو خود ان انگریزوں کے کاشت کردہ ہو تو لامحالہ تم تو اپنے باپ دادا کا دفاع ہی کر گے۔ اور رہی بات شان غوثیت کی تو تم جیسے کتوں کے بھونکنے سے میرے غوث الاعظم کا مقام کم نہ ہوا ہے اور نہ ہی ہوگا۔ بقول امام اہلسنت مجدد دین وملت امام الشاہ احمد رضا خاں محدث:
    تو گھٹائے سے کسی کے نہ گھٹا ہے نہ گھٹے
    جب بڑھائے تجھے اللہ تعلی تیرا۔

    وہابیوں کے منہہ پر طمانچہ
    وہابیوں پر لعنت بے شمار

    • The Real Islam

      قادری شیر صاحب
      ہم عموماً اسطرح کے بیہودہ اور لچّر کامنٹ اپنے بلاگ پر شائع نہیں کرتے بلکہ بہت آرام سے ڈیلیٹ اورکامنٹ کرنے والے کو سپیم کردیتے ہیں کہ اس میں صرف ایک سے دو کلک کی زحمت کرنا ہوتی ہے۔ لیکن اس دفعہ سوچا ہے کہ ہمارے بلاگ کے مستقل قاری آپکی گل افشانیوں کو پڑھ کر یہ سمجھ لیں کہ ایک مسلمان کیسا ’’نہیں‘‘ ہوتا ہے۔یا یہ کہ اختلاف رائے کی بنیاد پر دین کے نام پربازاری گفتگو کرنے والا شخص جب اپنے آپکو مسلمان اور سنت نبویؐ پر چلنے والا کہتا ہے تو یہ کسقدرمضحکہ خیز حد تک افسوسناک صورتحال ہوتی ہے۔ نبیﷺسے عشق کے ایسےتمام دعویدار اگر ’’عاشقی‘‘ چھوڑ کر محض آپؐ کی سنت پر چلےا والے بن جائیں تو انہیں معلوم ہو کہ محمد الرسول اللہؐ سے پہلے آنے والے کسی بھی نبی و پیغمبر یا پھر نبیؐ کے اصحاب کرامؓ میں سے کسی نے اپنے برے سے برے دشمن اور اپنے اوپر ظلم کے پہاڑ توڑ دینے والوں کے ساتھ بھی اس طرح کی گندی زبان روا نہیں رکھی کیونکہ اسلام تو ہے ہی مہذب اور شائستہ لوگوں کا مذہب، یہ تو وہ اعلیٰ و ارفی ٰ دین ہے جو جانوروں جیسی زندگی گزارنے والوں کو انسان بنا دیتا ہے، پھر بھلا اسکے حقیقی پیروکاروں کے اطوار ایسے کیسے ہو سکتے ہیں؟

      زیادہ امکان اسی بات کا ہے کہ ہم آپکےآئندہ آنے والے کامنٹ شائع نہیں کریں گے لیکن جاتے جاتے مختصراً یہ سنتے جائیں کہ ہم وہابی، اہلحدیث یا سلفی وغیرہ نہیں ہیں بلکہ ہم ان تینوں کو بھی بریلوی، دیوبند ، احمدی و قادیانی وغیرہ کی طرح محض ایک فرقہ سمجھتے ہیں۔ ہمیں کوئی فنڈنگ نہ سعودیہ سے آتی ہے، نہ ایران سے اور ہم قرآن و حدیث کی روشنی میں وہابیوں کے غلط عقائد اور تعلیمات کا پرچار بھی بالکل اسی طرح کرتے ہیں جسطرح صوفیت کے کالے کارناموں کا ذکر ہوتا ہے کیونکہ یہ تمام فرقے اور انکے اکابرین اللہ کی خالص توحید اور اسکے دین کے مجرم ہیں کیونکہ انہیں نے نبیؐ کےفرامین کے عین خلاف امت کوفرقہ فرقہ کرکے قبر پرستی اور شخصیت پرستی کی لعنت میں مبتلا کردیا۔ بہتر ہوگا کہ آپ کچھ وقت ہمارے دیگر مضامین پڑھنے میں صرف کریں تاکہ آپ تک نہ صرف فرقہ پرستی سے پاک دین کی تعلیمات پہنچیں بلکہ ’’جو میرے عقیدے پر نہیں وہ وہابی ہے‘‘ کی یہ بچگانہ اپروچ بھی بدلے۔ ہمارا مضمون فرقہ پرستی ۔ ایک جائزہ اس حوالے سے ایک اچھا سٹارٹنگ پوائنٹ ہے۔

      لیکن اگر یہ سب کرنا آپکے لیے ممکن نہیں تو برائے مہربانی اپنا راستہ پکڑیں اور کہیں اور جا کر اپنا غصہ نکالیں۔

      • محمد سجاد انجم

        الله كے كسي ولي كے بارے میں کچھ بولنے یا لکھنے سے پہلے دل پہ ہاتھ رکھ کے بخاری کی یہ صحیح حدیث پڑھ لیں۔۔۔۔۔۔۔۔ اورحدیث بھی قدسی جو خود رب العزت وحدہ لاشریک کا فرمان ہے.
        شاید کسی کو اردو یا عربی سمجھ نہ آئے تو انگلش بھی ساتھ ہے۔
        باب التواضع:
        باب: عاجزی کرنے کے بیان میں
        (38) CHAPTER. The humility or modesty or lowliness (to lower oneself).
        حدیث نمبر: 6502 === إخفاء التشكيل إظهار التشكيل
        حَدَّثَنِي مُحَمَّدُ بْنُ عُثْمَانَ بْنِ كَرَامَةَ، حَدَّثَنَا خَالِدُ بْنُ مَخْلَدٍ، حَدَّثَنَا سُلَيْمَانُ بْنُ بِلَالٍ، حَدَّثَنِي شَرِيكُ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ أَبِي نَمِرٍ، عَنْ عَطَاءٍ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ إِنَّ اللَّهَ قَالَ:‏‏‏‏”مَنْ عَادَى لِي وَلِيًّا فَقَدْ آذَنْتُهُ بِالْحَرْبِ، وَمَا تَقَرَّبَ إِلَيَّ عَبْدِي بِشَيْءٍ أَحَبَّ إِلَيَّ مِمَّا افْتَرَضْتُ عَلَيْهِ، وَمَا يَزَالُ عَبْدِي يَتَقَرَّبُ إِلَيَّ بِالنَّوَافِلِ حَتَّى أُحِبَّهُ، فَإِذَا أَحْبَبْتُهُ كُنْتُ سَمْعَهُ الَّذِي يَسْمَعُ بِهِ، وَبَصَرَهُ الَّذِي يُبْصِرُ بِهِ، وَيَدَهُ الَّتِي يَبْطِشُ بِهَا، وَرِجْلَهُ الَّتِي يَمْشِي بِهَا، وَإِنْ سَأَلَنِي لَأُعْطِيَنَّهُ، وَلَئِنْ اسْتَعَاذَنِي لَأُعِيذَنَّهُ، وَمَا تَرَدَّدْتُ عَنْ شَيْءٍ أَنَا فَاعِلُهُ تَرَدُّدِي عَنْ نَفْسِ الْمُؤْمِنِ يَكْرَهُ الْمَوْتَ، وَأَنَا أَكْرَهُ مَسَاءَتَهُ”.
        مجھ سے محمد بن عثمان نے بیان کیا، کہا ہم سے خالد بن مخلد نے، کہا ہم سے سلیمان بن بلال نے، ان سے شریک بن عبداللہ بن ابی نمر نے، ان سے عطاء نے اور ان سے ابوہریرہ رضی اللہ عنہ نے بیان کیا کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ”اللہ تعالیٰ فرماتا ہے کہ جس نے میرے کسی ولی سے دشمنی کی اسے میری طرف سے اعلان جنگ ہے اور میرا بندہ جن جن عبادتوں سے میرا قرب حاصل کرتا ہے اور کوئی عبادت مجھ کو اس سے زیادہ پسند نہیں ہے جو میں نے اس پر فرض کی ہے (یعنی فرائض مجھ کو بہت پسند ہیں جیسے نماز، روزہ، حج، زکوٰۃ) اور میرا بندہ فرض ادا کرنے کے بعد نفل عبادتیں کر کے مجھ سے اتنا نزدیک ہو جاتا ہے کہ میں اس سے محبت کرنے لگ جاتا ہوں۔ پھر جب میں اس سے محبت کرنے لگ جاتا ہوں تو میں اس کا کان بن جاتا ہوں جس سے وہ سنتا ہے، اس کی آنکھ بن جاتا ہوں جس سے وہ دیکھتا ہے، اس کا ہاتھ بن جاتا ہوں جس سے وہ پکڑتا ہے، اس کا پاؤں بن جاتا ہوں جس سے وہ چلتا ہے اور اگر وہ مجھ سے مانگتا ہے تو میں اسے دیتا ہوں اگر وہ کسی دشمن یا شیطان سے میری پناہ مانگتا ہے تو میں اسے محفوظ رکھتا ہوں اور میں جو کام کرنا چاہتا ہوں اس میں مجھے اتنا تردد نہیں ہوتا جتنا کہ مجھے اپنے مومن بندے کی جان نکالنے میں ہوتا ہے۔ وہ تو موت کو بوجہ تکلیف جسمانی کے پسند نہیں کرتا اور مجھ کو بھی اسے تکلیف دینا برا لگتا ہے۔

        Narrated Abu Huraira: Allah’s Apostle said, “Allah said, ‘I will declare war against him who shows hostility to a pious worshipper of Mine. And the most beloved things with which My slave comes nearer to Me, is what I have enjoined upon him; and My slave keeps on coming closer to Me through performing Nawafil (praying or doing extra deeds besides what is obligatory) till I love him, so I become his sense of hearing with which he hears, and his sense of sight with which he sees, and his hand with which he grips, and his leg with which he walks; and if he asks Me, I will give him, and if he asks My protection (Refuge), I will protect him; (i.e. give him My Refuge) and I do not hesitate to do anything as I hesitate to take the soul of the believer, for he hates death, and I hate to disappoint him.”

      • The Real Islam

        Brother, Sufis tend to always overlook the hikmah in a Qur’anic verse or hadith and try to use it to justify their wrong aqeedah. The above hadith does not mean that a pious person becomes one with Allah (which is fina fi Allah) in Sufi beliefs. The above hadith says quite clearly that a pious and humble momin is able to align his worldview and his actions according to Allah’s teachings. That is, he becomes the best of submitters. This is why the hadith starts with the beautiful words: And the most beloved things with which My slave comes nearer to Me, is what I have enjoined upon him. And what Allah has enjoined upon a slave is to follow the tareeqah / Shariah as explained by the Nabi (SAW), not invent his own tareeqah as a Sufi will do. Over the last 12 centuries, Sufis have been unable to understand this very basic concept in Islam.

        A wali or friend of Allah is one who is the most pious according to the laws and expectations set by Allah. A person who shouts loudly about his ‘closeness to Allah’ or who claims divinity or miracles, or who asks other Muslims to follow him and not Allah’s laws, or who starts claiming to own Allah’s attributes like knowing the Unseen, such a person is not a wali but a transgressor stepping outside the limits set by Allah. I hope this clarifies the meaning of this hadith.

  7. Faisal Mansoor

    Real Islam, I must say this man qadiri really showed the caliber of a “brailvi” a sect that call themselves “aashiq e Rasool (SAW)” but are totally opposite in their beliefs and deeds. they have many gods and AQJ is one of them, if they had a brain they would not follow such a twisted belief so how can we expect that they would speak the language of gentlemen, the language of Islam and Language of Prophet SAW, they are follower of satan and let them speak the language of same. I appreciate that you published their comments.. bravo and keep it up you are doing good work..

    • The Real Islam

      Brother Faisal,

      Thank you for your comment and your words of encouragement. I would just make a humble request to not make any negative comments about someone’s intellect. People are intelligent human beings and that is why they will be answerable to Allah for their choice of religion / beliefs. It is always best to keep the focus on the argument. JazakAllah.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s